علاقہ تالاش دیر لوئر میں گرلز ڈگری کالج اور بوائز ڈگری کالج کے قیام اور ان کی ہنگامی بنیادوں پر تعمیر کیلئے ہدایات جاری

خیبر پختونخوا کے وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے علاقہ تالاش دیر لوئر میں گرلز ڈگری کالج اور بوائز ڈگری کالج کے قیام اور ان کی ہنگامی بنیادوں پر تعمیر کیلئے ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کے مذکورہ بنیادی اور دیرینہ مطالبات جلد پورے کر دئیے جائیں گے جس سے علاقے کی پسماندگی دور ہونے کے ساتھ ساتھ آئندہ نسلیں بھی زیور تعلیم سے آراستہ ہوں گی اور علاقے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کریں گی۔وزیر خزانہ نے کہا کہ معماران قوم پر نئی نسل کی تعلیم و تربیت اور پاکستان کو نئے چیلنج سے ہم آہنگ کرنے کی بڑی ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں اساتذہ برادری اور شعبہ تعلیم سے وابستہ ہر فرد ملک میں قیام امن اور ترقی و خوشحالی کے لئے اپناکردار اداکرے اور اپنی ذمہ داریاں احسن طور پر نبھائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے تالاش لوئر دیر میں لڑکے اور لڑکیوں کے لئے الگ الگ ڈگری کالجوں کے قیام کے سلسلے میں منعقدہ اجلاس اور تنظیم اساتذہ خیبر پختونخوا کے نمائندہ وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔ مذکورہ الگ الگ اجلاسوں میں ڈپٹی کمشنر لوئر دیر عطاء الرحمن،محکمہ اعلیٰ تعلیم کے چیف پلاننگ آفیسرزمان خان مروت ، ایکسئین سمیع اللہ خان مروت اور دیگر متعلقہ افسران نے بھی شرکت کی جبکہ تنظیم اساتذہ پاکستان خیبر پختونخوا کے وفد میں خیر اللہ حواری اور اسلام الدین نے شرکت کی۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ایجوکیشن محمد رفیق خٹک بھی موجود تھے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ موجودہ حکومت تعلیم کے حوالے سے انتہائی سنجیدہ اور ٹھوس اقدامات کر رہی ہے اور تعلیمی اداروں کی بنیادی ضروریات پوری کرنے کے لئے اربوں روپے کے فنڈز خرچ کئے گئے ہیں اسی طرح ہزاروں کی تعداد میں نئی اسامیاں پیدا کی گئی ہیں جبکہ چالیس ہزار سے زائد اساتذہ کو بھرتی کرنے کا مطلب چالیس ہزار سے زائد خاندانوں کو روزگار دلانا بھی ہے اس کے علاوہ ہزاروں کی تعداد میں مختلف کیڈر کے اساتذہ کو ترقیاں بھی دی گئی ہیں تاہم یہ سلسلہ مزید بھی جاری رہے گا اس لئے حکومت اور قوم اساتذہ سے توقع رکھنے میں بھی حق بجانب ہیں کہ اب اساتذہ مزید خلوص دل ، محنت اور جانفشانی سے اپنے فرائض منصبی ادا کرتے ہوئے نئی نسل کی احسن تعلیم و تربیت میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھیں گے

Tags: