پی ٹی آئی کی حکومت خود کو نوجوانوں کی نمائندہ حکومت سمجھتی ہے -وزیر اعلی

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت خود کو نوجوانوں کی نمائندہ حکومت سمجھتی ہے کیونکہ ہمارا انتخاب نوجوان نسل کی مرہون منت ہے جو کرپشن کا مکمل خاتمہ اور میرٹ و قانون کی بالادستی چاہتی ہے۔اللہ تعالیٰ کے فضل سے ہم نے اپنے منشور پر سو فیصد عمل درآمد کے ساتھ ساتھ نوجوانوں کی ہم سے وابستہ توقعات بھی پوری کی ہیں۔حیرت ہے کہ ہماری حکومت سے پہلے قومی اور صوبائی سطح پر واضح یوتھ پالیسی نہیں تھی مگر ہم نے نہ صرف یوتھ پالیسی تشکیل دی اور اس پر قانون سازی کی بلکہ اُمور نوجوانان کی الگ نظامت قائم کی جس نے نوجوانوں کی تخلیقی صلاحیتیں اُجاگر کرنے اور صحت مند سرگرمیوں کے فروغ کے لئے زبردست کام کیا ہے۔ انہوں نے یقین دلایا کہ آئندہ بھی ہر مرحلے پر نوجوانوں کی توقعات پوری کی جائیں گی اور اُن کے اعتماد کو ٹھیس نہیں پہنچنے دی جائے گی۔وہ نشتر ہال پشاور میں  یوتھ ٹرافی اور نیشنل یوتھ کارنیول کی افتتاحی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔تقریب سے صوبائی وزیر کھیل و اُمور نوجوانان محمود خان، نظامت اُمور نوجوانان کے ڈائریکٹر اسفندیار خٹک، نیشنل یوتھ کارنیول کے آرگنائزر محمد عثمان اور نیب کے ایڈیشنل ڈائریکٹر میاں وقارنے بھی خطاب کیا اور صوبے میں صحت مند جسمانی اور تخلیقی سرگرمیوں کے فروغ اور معاشرے کو کرپشن سمیت سماجی برائیوں سے پاک کرنے کیلئے نوجوانوں کے کردار پرروشنی ڈالنے کے علاوہ اس ضمن میں صوبائی حکومت کے ٹھوس اقدامات کو سراہا۔اس موقع پر وزیراعلیٰ نے نیشنل یوتھ کارنیول کے لوگو اورٹرافی کی نقاب کشائی بھی کی۔ پرویز خٹک نے کہاکہ نوجوانوں کو تعلیم اور روزگار کے ساتھ ساتھ بہتر تفریحی سہولیات سے چشم پوشی کی گئی تو اس کا نتیجہ اُن کا احساس محرومی بڑھنے اور انتہا پسندی و دہشت گردی میں اضافے کی صورت میں سامنے آسکتا ہے تاہم خیبرپختونخوا میں پی ٹی آئی کی حکومت نے نوجوانوں کے لئے اپنے ٹھوس اور جرات مندانہ اقدامات کی بدولت ان تمام خطرات کو ٹال دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ نوجوانوں کی تخلیقی صلاحیتوں میں اضافے کیلئے اُن کی نظامت کو پوری طرح فعال بنانے کے ساتھ ساتھ صوبے بھر میں کھیلوں کی سہولیات کئی گنا بڑھا دی گئی ہیں۔اضلاع اور تحصیلوں کی سطح پر سٹیڈیم اور معیاری پلے گراؤنڈ تعمیر کئے گئے اورکھیلوں کے مقابلوں کا اہتمام کیا گیا۔ صوبے میں صنعتی اور معاشی ترقی کی بنیاد ڈال کر نوجوانوں کے روزگار کے مواقع بھی بڑھائے جارہے ہیں۔ سی پیک کے تحت انفراسٹرکچر کی بہتری کے ساتھ ساتھ سینکڑوں غیر ملکی تعلیمی، معاشی وتجارتی معاہدے بھی کئے گئے دو ہفتے قبل صوبے کے 200 طلباء کو چینی زبان سیکھنے کیلئے چین کی تین بہترین یونیورسٹیوں میں بھیجا گیا جبکہ 500 مزید طلباء و طالبات کا چناؤ بھی کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ جب ہم اقتدار میں آئے تو ہمارا نوجوان مایوس تھا۔سسٹم اُسے اپنی صلاحیتیں منوانے کا موقع نہیں دے رہا تھا۔ادارے سیاست زدہ ہو چکے تھے۔حکمران طبقے کے تابع ان اداروں نے نوجوان کو محرومی اور تاریکی دی۔ہمارے ملک کے خراب حالات کے پیچھے کرپشن، جرائم پیشہ عناصر اور دہشت گردی کا گٹھ جوڑ ہے۔اس گٹھ جوڑ نے ہمارا مستقبل تاریک کیا۔ ملک کو مسائل کی دلدل سے نکالنے کیلئے اس گٹھ جوڑ کو توڑنا ضروری ہے۔ گزشتہ کئی دہائیوں سے لوٹ کھسوٹ کی وجہ سے معاشرے میں سماجی برائیوں اور دہشت گردی کا نیٹ ورک بن گیا۔ بااختیار طبقہ اپنے مقاصد کیلئے سیاسی چالیں چلتا رہا۔دشمن کا آلہ کار بنتا رہا۔شرپسندی پنپتی رہی۔ حکمران اپنی ناک سے آگے دیکھنے کی صلاحیت سے محروم ہو چکے تھے۔ ملک کی سلامتی اور مفادات میں غفلت اور ذاتی مفادات کیلئے سرگرم رہے۔ ہم نے من حیث القوم دہشت گردی کا نیٹ ورک توڑنے کے لئے بے تحاشہ قربانیاں دیں۔ ہم سب نے اس جنگ میں اپنا حصہ ڈالا اور اپنے حصے کی جنگ جیتی تاہم اس جیت کو دیر پا بنانے کیلئے کرپشن کا خاتمہ پہلا قدم ہے۔اس سلسلے میں تعلیم اور شعور کی بیداری بنیادی اہمیت رکھتی ہے۔انہوں نے کہاکہ ہم نے نوجوانوں کی سیاسی، معاشی اور معاشرتی ترقی کیلئے بنیادی اقدامات کئے۔اِن میں مقامی حکومتوں میں نوجوانوں کی نمائندگی، شفاف نظام کے ذریعے روزگار کے مواقع،صوبائی حکومت کی طرف سے خود کفالت سکیم اور 72تحصیلوں میں کھیل کے میدان شامل ہیں۔تعلیمی اداروں کو بہترین سہولیات کی فراہمی اور نوجوانوں کی اعلیٰ تربیت کے لئے اعلیٰ تربیت یافتہ اساتذا کا انتظام، پرائمری تعلیم میں مثالی اقدامات، اعلیٰ تعلیم کے لئے خصوصی وظائف،پاکستان کی پہلی ٹیکنیکل یونیورسٹی کا قیام،فنی تعلیم کا معیار بہتر بنانے کے لئےTEVTA کا نئے رول کے ساتھ قیام اور اس کی تنظیم نو سمیت دیگر چیدہ چیدہ اقدامات کئے ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ رواں سال انڈر 23گیمز کو وسعت دی گئی دوسری مرتبہ صوبے کی تاریخ میں سب سے بڑے کھیلوں کے مقابلے منعقد کرائے گئے جس میں صوبے بھر سے ہزاروں کھلاڑیوں نے حصہ لیا۔ اِس کے علاوہ جواں میلہ، ہنر میلہ،رچ میلہ، انٹر پراونشل یوتھ ایکسچینج پرو گرام، سافٹ سکل ٹریننگ پروگرام اور کئی دوسرے منصوبے شروع کئے گئے۔ 

Tags: